سعودی عرب کی سلامتی کو خطرہ ہوا تو پاکستان دے گا ساتھ: رهيل شریف

سعودی عرب کی سلامتی کو خطرہ ہوا تو پاکستان دے گا ساتھ: رهيل شریف

راولپنذی: پاكستان چیف جنرل رهيل شریف نے واضح کیا کہ پاکستان سعودی عرب کے ساتھ دفاعی تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے اور اس کی علاقائی سالمیت اور خود مختاری کو اگر کوئی خطرہ ہوا تو پاکستان اس کا بھرپور جواب دے گا.

وہ پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے سعودی عرب کے یوراج اور وزیر دفاع پرنس محمد بن سلمان سے بات چیت کر رہے تھے. پرنس محمد بن سلمان نے اتوار کو عام ہیڈکوارٹر (جی ایچ کیو) راولپنڈی میں ان سے ملاقات کی ہے اور انہیں علاقائی سیکورٹی اور دفاعی میدان میں تعاون کے سلسلے میں بحث کی ہے.

جنرل رهيل شریف نے ان سے بات چیت میں کہا کہ پاکستان کے سعودی عرب اور دیگر خلیجی عرب ممالک کے ساتھ قریبی تعلقات کی تعمیر کر رہے ہیں اور وہ آپ کی حفاظت کو بہت اہمیت دیتا ہے.

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری بیان کے مطابق سعودی وزیر دفاع نے بھی جواب میں اسی طرح کے خیالات کا اظہار کیا ہے اور انہوں نے پاکستان کی مسلح افواج کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابیوں کی تعریف هےانكھو نے سعودی ریاست کی طرف سے تمام معاملات میں پاکستان کے موقف کی حمایت دہرایا گیا ہے. سعودی عرب کے ایران کے ساتھ حال تنازعہ کے تناظر میں تین دن میں ایک اعلی سعودی افسر کا پاکستان کا یہ دوسرا دورہ هےساودي وزیر خارجہ عادل الجبير نے جمعرات کو اسلام آباد کا دورہ کیا تھا اور ایران کے ساتھ کشیدگی اور دہشت گردی مخالف عرب اتحاد کو لے بحث کی تھی.