نماز یا کام کی شرط پر امریکہ میں مسلمانوں نے چنی نماز

نماز یا کام کی شرط پر امریکہ میں مسلمانوں نے چنی نماز

واشنگٹن: ایک امریکی "گوشت-پیکنگ"  'کمپنی نے 200 سے زیادہ مسلمانوں کو صرف اس وجہ سے نکال دیا چونکہ وہ کام کرنے کی جگہ پر نماز پڑھنا چاہتے تھے.

زیادہ تر لوگ صومالیہ سے ہیں- خبر کے مطابق کمپنی نے 2009 سے ہی ایک "رفلکشن روم" بنایا تھا جہاں مسلمان ملازم نماز ادا کرتے تھے لیکن اب ان لوگوں کا کہنا ہے کہ کمپنی نے پالیسی بدل دی ہے.

"یہ سارے ملازم اچھا کام کرتے ہیں اور کوئی دوسری وجہ نہیں ہے، ان لوگوں کو لگتا ہے کہ کام چھوڑنے سے زیادہ برا نماز نہ پڑھنا ہے، یہ خدا کی نعمت سے محروم رہنے جیسا ہے- اس سے پہلے انہیں مختلف وقت پر 5 سے 10 منٹ کی چھٹی دے دی جاتی تھی لیکن اب انہیں کہا گیا ہے کہ "اگر نماز پڈھني ہے تو گھر جاؤ"