تہران کے جوہری پروگرام سے پڑوسیوں کو خطرہ نہیں: جنرل صالحی

تہران کے جوہری پروگرام سے پڑوسیوں کو خطرہ نہیں: جنرل صالحی

ایران نے ایک بار پھر اپنے میزائل پروگرام کا دفاع کرتے ہوئے اسے جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔ ایرانی فوج کے جنرل چیف کا کہنا ہے کہ تہران کے میزائل پروگرام پر پابندیوں کے حوالے سے اقوام متحدہ کی قراردادوں پر کسی صورت میں عمل درآمد نہیں کیا جا سکتا ہے، ایران میزائل پروگرام سے متعلق سلامتی کونسل کی شرائط قبول نہیں کرے گا۔

ذراےُ کے مطابق ایران کے جنرل چیف عطاء اللہ صالحی نے ایران کے خلاف عالمی قراردادوں کو کوئی اہمیت نہیں دی جائے گی اور نہ ہی ہم ان قراردادوں پر عمل درآمد کے پابند ہیں۔ وقت کے ساتھ ساتھ ایران کے میزائل سسٹم کی صلاحیت میں مسلسل اضافہ جاری رہے گا۔

ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جنرل عطاء اللہ صالحی نے کہا کہ ایران کا میزائل پروگرام پر عالمی قراردادوں کی پابندی نہ کرنا جوہری معاہدے کی خلاف ورزی نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم اپنا میزائل پروگرام جاری رکھیں گے، کیونکہ یہ ملک کے دفاع کے لیے ناگزیر ہے۔ وقت کے ساتھ اس کی قوت اور صلاحیت میں مزید اضافہ ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایران کا میزائل پروگرام کسی پڑوسی یا دوست ملک کے لیے خطرہ نہیں ہے۔

خیال رہے کہ امریکا نے پچھلے ماہ 17 جنوری کو ایران کے میزائل پروگرام بالخصوص بیلسٹک میزائل سسٹم کو عالمی اور علاقائی سلامتی کے لیے خطرہ قرار دیتےہوئے تہران پر نئی پابندیاں عاید کی تھیں۔ امریکا کی جانب سے تہران پر یہ پابندی ایک ایسے وقت میں عاید کی گئیں جب جوہری معاہدے پرعمل درآمد یقینی ہونے کے بعد عالمی سطح پر ایران پر عاید اقتصادی پابندیاں اٹھانے کا اعلان کیا گیا تھا۔